الیکشن کمیشن ملک میں حقیقی جمہوریت نہیں آنے دیتا، عمران خان

عمران خان کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن ملک میں حقیقی جمہوریت نہیں آنے دیتا، عوام اپنے ووٹ سے اپنے ملک کے فیصلے نہیں کرسکتے، حکومت کو گرا اور اٹھا نہیں سکتے، کیونکہ یہ الیکشن کو کنٹرول کرلیتے ہیں۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے الیکشن کمیشن آف پاکستان پر سنگین نوعیت کے الزامات عائد کردیئے۔

اسلام آباد اور کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں الیکشن کمیشن کیخلاف احتجاج کیلئے جمع کارکنوں سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ اسلام آباد کو ایک قلعہ بنادیا گیا ہے، ہمارے احتجاج سے انہیں اتنا خوف کیوں ہے، ایسے لگ رہا ہے جیسے کوئی اسلام آباد پر حملہ کرنے لگا ہے، ہمیشہ کوشش رہی کہ آئین و قانون کے مطابق احتجاج کریں اور ملک کو نقصان نہ ہو، آئین ہمیں پُرامن احتجاج کی اجازت دیتا ہے۔

ن لیگ پر کڑی تنقید کرتے ہوئے ان کا کہنا ہے کہ یہ خوف پھیلانا چاہتے تھے، 25 مئی کو جو ظلم کیا گیا وہ کبھی نہیں بھولوں گا، اللہ نے لوگوں کے دل موڑ دیئے، قوم سڑکوں پر نکلنا شروع ہوگئی، سازش کے تحت حکومت کو گرا دیا گیا، یہ سارے مطمئن ہوگئے کہ پی ٹی آئی کا جنازہ نکل گیا، ان کی دھاندلی کے باوجود یہ الیکشن ہار گئے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ انہوں نے ہماری پارٹی توڑنے کیلئے پیسہ چلایا، یہ سب کچھ فیل ہوگیا تو انہوں نے الیکشن کمیشن کا سہارا لیا، یہ ہمیشہ اداروں کو استعمال کرتے ہیں، ذوالفقار علی بھٹو کو قتل کیا گیا تو انہیں خوف تھا کہ وہ عوام میں آگیا تو سنبھالا نہیں جائے گا، پیپلزپارٹی کے جو اتحادی ہیں انہوں نے بھٹو کے قتل میں مدد کی۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ فارن فنڈنگ کیس کی سماعت کے دوران ن لیگ کا وفد الیکشن کمیشن کو ملنے گیا، جس نے کہا کہ تحریک انصاف کے فنڈنگ کیس کا فیصلہ جلد سنائیں، فیصلے میں الیکشن کمیشن اپنی حدود سے باہر نکل گیا، مخالفین کو خوف ہے کہ قوم آزاد ہورہی ہے، قوم کو غلام بنانے کیلئے ہر ممکن کوشش ہورہی ہے، وہ سنبھالی نہیں جارہی۔

انہوں نے مزید کہا کہ الیکشن کمیشن کے ذریعے قوم غلام بنتی ہے، لوگ ووٹ کسی کو ڈالتے ہیں یہ کسی اور کو جتوا دیتے ہیں، الیکشن کمیشن کو ایسا بنادیا گیا کہ اس کے ذریعے آرام سے حکومتیں کنٹرول ہوسکتی ہیں، الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں لانے کیلئے پوری کوشش کی، اس کا فائدہ یہ ہوتا ہے کہ خفیہ ہاتھ بیٹھ کر رزلٹ کنٹرول نہیں کرسکتے، جیسے پولنگ ختم ہوتی ہے، بٹن دبائیں رزلٹ آجاتا ہے، ہمارے ہاں پولنگ کے خاتمے اور رزلٹ کے اعلان کے درمیان میں چکر چلتے ہیں ہر قسم کے حربے استعمال کئے جاتے ہیں۔

پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا ہے کہ الیکشن سروے کرنے والے پٹن کے مطابق پاکستان میں انتخابی دھاندلی کے 163 طریقے ہیں، الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے استعمال سے 130 طریقے ختم ہوجاتے ہیں، ایران اور بھارت بھی ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہیں، ن لیگ اور پیپلزپارٹی نے پورا زور لگا کر الیکشن کمیشن کے ساتھ مل کر ای وی ایم کو آنے سے روکا۔

انہوں نے ای سی پی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن ملک میں حقیقی جمہوریت نہیں آنے دیتا، عوام اپنے ووٹ سے اپنے ملک کے فیصلے نہیں کرسکتے، حکومت کو گرا اور اٹھا نہیں سکتے، کیونکہ یہ الیکشن کو کنٹرول کرلیتے ہیں، سیٹوں کو اپنی مرضی سے بانٹ دیا جاتا ہے، یہاں جمہوریت کو کنٹرول کرنے کا طریقہ الیکشن کمیشن اور انتخابات کرانے کا نظام ہے۔

سابق وزیراعظم کا یہ بھی کہنا تھا کہ سینیٹ الیکشن میں ایم پی ایز کو خریدا جاتا ہے، ہم نے 20 ایم پی ایز کو سینیٹ الیکشن میں رقم لینے پر نکالا، پوری کوشش کی کہ خفیہ ووٹنگ نہ ہو شو آف ہینڈ کے ذریعے پولنگ ہو، اس الیکشن کمیشن نے یہ بھی نہیں ہونے دیا۔

فارنگ فنڈنگ کا معاملہ

فارن فنڈنگ کیس سے متعلق پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ شوکت خانم کا آدھا پیسہ اوورسیز پاکستانی دیتے ہیں، پی ٹی آئی پہلی جماعت ہے جس نے سیاسی فنڈ ریزنگ کی، ان دونوں پارٹیوں (ن لیگ اور پیپلزپارٹی) نے کیوں فنڈ ریزنگ نہیں کی؟، ان کو کوئی پیسہ نہیں دیگا۔

ان کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن کہتا ہے بیرون ملک سے جو پیسہ آیا وہ فارن فنڈنگ ہے، اوورسیز پاکستانی جو پیسہ بھیجتے ہیں وہ کیا ہے؟، امریکا میں پیسہ اکھٹے کرنے کیلئے لیگل اینٹٹی بنانا ہوتی ہے۔

ن لیگ اور پیپلزپارٹی پر الزام لگاتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ یہ ذاتی مفاد کیلئے ملک کو تباہی کی طرف دھکیل رہے ہیں، کون سی ایسی چیز تھی جو الیکشن کمیشن نے کہا فارن فنڈنگ ہے۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ انہوں نے کہا عمران خان کو نااہل کرنا چاہئے، اس نے دستخط کئے تھے، سرٹیفکیٹ اور حلف نامے کا فرق سمجھنا چاہئے، عارف نقوی سے پیسے 2012ء میں لئے اس پر فراڈ کا کیس 2018ء میں بنا، ہمارے پاس 40 ہزار ڈونرز ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.