پاکستانی تیراک فیضان ہنگری میں لاپتہ thumbnail

پاکستانی تیراک فیضان ہنگری میں لاپتہ

پاکستانی تیراک فیضان اکبر ہنگری میں لاپتہ ہوگئے، وہ فینا ورلڈ چیمپئن شپ میں شرکت کیلئے پچھلے ہفتے بڈاپسٹ پہنچے تھے۔

پاکستان کے 22 سالہ تیراک فیضا اکبر 4 مرتبہ کے نیشنل گولڈ میڈلسٹ ہیں، انہیں ہنگری کے دارالحکومت بڈاپسٹ میں 19ویں فینا ورلڈ چیمپئن شپ میں شرکت کرنا تھی۔

جیو نیوز کے مطابق فیضان اکبر بڈاپسٹ میں اپنے ہوٹل سے ساتھیوں کو بتائے بغیر گئے اور واپس نہیں آئے، وہ اپنی پاکستانی شرٹ بھی کمرے میں چھوڑ گئے جبکہ دیگر ضروری سامان ساتھ لے گئے۔

گجر خان میں پیدا ہونیوالے پاکستانی ایتھلیٹ نے 19 جون کو 100 میٹر بیک اسٹروکس ایونٹ بھی مس کردیا۔

فیضان اکبر کے ڈپارٹمنٹ، جس کا نام سامنے نہیں لایا گیا، نے بھی ہنگری میں پاکستانی سفارتخانے سے رابطہ کیا کیا ہے، مقامی پولیس اور متعلقہ اداروں کو بھی پاکستانی تیراک کی تلاش کی ہدایت کردی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق پاکستانی تیراک فیضان اکبر باآسانی ہنگری سے کسی دوسرے یورپی ملک جاسکتے ہیں کیونکہ ان کے پاس شینگن ویزا ہے، دوسری جانب جب فیضان کی گمشدگی سے متعلق ان کے والد کو بتایا گیا تو وہ کافی پرسکون تھے۔

فیضان اکبر کو 28 جولائی سے 8 اگست تک انگلینڈ میں ہونیوالے کامن ویلتھ ویمز کیلئے پاکستانی سوئمنگ اسکواڈ سے نکال دیا گیا ہے۔

فیضان اکبر کو ایونٹ میں شرکت نہ کرنے پر 20 لاکھ روپے جرمانہ ادا کرنا پڑے گا کیونکہ انہوں نے ہنگری روانگی سے قبل ایک معاہدے پر دستخط کئے تھے۔

باقی 3 پاکستانی تیراک امان صدیقی، جہاں آراء نبی اور بسمہ خان فی الحال فینا ورلڈ چیمپئن شپ میں حصہ لے رہے ہیں، جو 3 جولائی کو اختتام پذیر ہوگی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.