عمران خان سیاستدان نہیں، انہیں گرفتار کیا جانا چاہئے، وزیرداخلہ thumbnail

عمران خان سیاستدان نہیں، انہیں گرفتار کیا جانا چاہئے، وزیرداخلہ

**وزير داخلہ رانا ثناء اللہ کہتے ہيں عمران خان سياستدان نہيں يہ ملک ميں فساد چاہتے ہيں، انہيں گرفتار ہونا اور قانون کے مطابق کارروائی ہونی چاہئے، تمام حکومتی اتحادی جماعتیں کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے بات چیت کی حامی ہیں۔ **

سماء کے پروگرام نديم ملک لائيو ميں وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کا خصوصی تفصیلی انٹرویو میں رانا ثناء اللہ نے کہا کہ کالعدم ٹی ٹی پی سے متعلق تفصیلی بریفنگ ہوئی تقریباً تمام پہلوؤں کو کور کیا گیا، حکومت اور اتحادی جماعتیں کالعدم ٹی ٹی پی سے بات چیت کے حق میں ہیں، آصف زرداری، مولانا فضل الرحمان اور ایم کیو ایم کا بھی یہی مؤقف ہے۔

وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ تمام جماعتوں نے آئین کے تحت بات چیت کی حمایت کی، کسی ايسے مطالبے پر بات نہيں ہونی چاہئے جو ماورائے آئين ہو، جب بات چیت نتيجے کے قريب ہو تو پارليمنٹ ميں لايا جانا چاہئے، کالعدم ٹی ٹی پی سے متعلق بات چیت کو پارلیمنٹ میں زیر بحث لایا جائے گا، کالعدم ٹی ٹی پی کو قانون اور آئین کے نیچے آنا ہوگا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کالعدم ٹی ٹی پی کے گرفتار ساتھیوں کی رہائی، فاٹا کو دوبارہ الگ کرنے اور فوج واپس بلانے پر کوئی بات نہیں ہوگی کیونکہ یہ آئین کیخلاف باتیں ہیں، اے پی ایس میں ملوث لوگوں کو معاف کرنے سے معاشرہ شدید متاثر ہوگا، طالبان سے جنگ بندی مؤثر ہے، اس وقت تک مؤثر رہے گی جب تک معاملات طے نہیں پاجاتے۔

ایک اور سوال پر رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ چند ہفتوں نہیں کچھ مہینوں میں یہ بات کسی رخ پر پہنچ جائے گی، عسکری اور سیاسی قیادت کا فیصلہ ہے کہ کسی کو ہتھیار دوبارہ اٹھانے کی اجازت نہیں دی جائے گی، اگر بات نہ مانی گئی تو لڑائی کیلئے تیار ہیں، عسکری قیادت نے یقین دلایا ہے کہ کالعدم ٹی ٹی پی کو ساٹ آؤٹ کرسکتے ہیں، ٹی ٹی پی کے پيچھے ایسی قوتيں ہيں جو پاکستان ميں امن نہيں ديکھنا چاہتيں۔

ندیم ملک سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ عمران خان سياستدان نہيں يہ ملک ميں فساد چاہتے ہيں، لانگ مارچ کی آڑ ميں عمران خان قتل و غارت چاہتے تھے۔

ان کا کہنا ہے کہ عمران خان کو اس سوچ پر عمران خان کو گرفتار ہونا چاہئے، ان کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی ہونی چاہئے۔

رانا ثناء اللہ نے مزید کہا کہ اگر 25 مئی کا پروگرام کامیاب ہوجاتا تو ملک میں قتل و غارت ہوتی، یہ قتل و غارت کروانا چاہتا تھا، اسی پروگرام کے تحت عمران خان نے پورا مہینہ تیاری کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.