کراچی:ایک گھنٹے میں 3 ڈکیتیوں کے دوران 2 افراد قتل thumbnail

کراچی:ایک گھنٹے میں 3 ڈکیتیوں کے دوران 2 افراد قتل

سماء کے سینیئر پروڈیوسر اطہرمتین کی شہادت کے بعد بھی کراچی میں کچھ نہیں بدلا اور شہر میں آج بھی ڈاکووں کا راج برقرار ہے ۔ شہر کے مختلف علاقوں میں ایک گھنٹے میں دوران ڈکیتی 2 افراد قتل ہوگئے۔  

لانڈھی میں کالج یونیفارم میں کھڑے 19 سال کے عثمان کا جُرم صرف واردات ہوتے دیکھنا تھا۔ ڈاکوؤں نے گولی ماردی۔ دوسرا واقعہ کورنگی گودام چورنگی پر ہوا۔

فرسٹ ایئر کا طالب علم  عثمان کالج جانے کے لیے گھر سے نکلا تھا جب دوست کی گلی میں  پہنچا تو اس  نے گلی میں ڈکیتی ہوتی دیکھ کر  بھاگنے کی کوشش کی جس پر ڈاکووں نے فائرنگ کردی۔ اہلخانہ کا کہنا ہے کہ  عثمان کا چند دن پہلے ہی فضائیہ کالج میں داخلہ  ہوا تھا۔

لانڈھی میں 19 سالہ عثمان کے قتل کے چند گھنٹے بعد کورنگی  کی گودام چورنگی پر ڈاکوؤں نے فارماسیوٹیکل کمپنی کی وین کو لوٹنے کی کوشش کی اور اس دوران گولیاں بھی برسادیں جس کے نتیجے میں کمپنی کا ملازم اشوک موقع پرہی دم توڑگیا۔

دوسری جانب کراچی کے علاقے سرجانی میں بھی ڈکیتی مزاحمت پر فائرنگ سے نوجوان زخمی ہوگیا۔ پولیس اعداد وشمار کے مطابق رواں سال ڈکیتیوں کے دوران 17افراد قتل ہوچکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.